پاکستان میں ڈالر تاریخ کی بند ترین سطح161 روپے تک پہنچ گیا

نٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح 161 روپے پر پہنچ گیا ہے۔

روپے کی قدر میں مسلسل کمی کا سلسلہ جاری ہے اور ڈالر تیزی کے ساتھ ڈبل سنچری کی جانب گامزن ہے، آج انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر مزید 4 روپے 2 پیسے مہنگا ہوگیا جس کے بعد ڈالر کی قیمت 161 روپے کی نئی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے۔

اوپن مارکیٹ میں گزشتہ ایک ماہ کے دوران ڈالر کی قیمت تقریباً 7 روپے بڑھ گئی جب کہ رواں ماہ انٹربینک میں ڈالر 8 روپے 8 پیسے مہنگا ہوا، روپے کی قدر کم ہونے سے جون کے مہینے میں قرضوں کی مالیت میں 800 ارب روپے کا اضافہ ہوا ہے۔

اضح رہے کہ گزشتہ چند ماہ کے دوران ڈالر 10 روپے سے زیادہ مہنگا ہوا ہے جس کے باعث پاکستان پر غیرملکی قرضوں کے حجم میں ایک ہزار ارب روپے سے زائد اضافہ ہوگیا ہے جبکہ ترقیاتی منصوبوں کی لاگت بھی بڑھ گئی ہے۔

یکسچینج کمپنیز آف پاکستان کے جنرل سیکریٹری ظفر پراچہ کے مطابق آج ڈالر 161روپے تک پہنچ چکا ہے اور پاکستان کی تاریخ میں سب سے بلند ترین سطح پر ہے۔

ظفر پراچہ نے بتایا ہے کہ ڈالر کی قدر میں ایک سال کے دوران 32 فیصد اضافہ ہوا ہے، جو کہ اس سے پہلے کبھی نہیں ہوا۔