بھارت میں عبادت کرنے والی خاتون پراسرار طورپر لاپتہ ہو گئی

ے پور (مانیٹرنگ ڈیسک) برصغیر پاک و ہند دنیا کا وہ خطہ سمجھے جاتے ہیں جہاں آج بھی توہم پرستی اور قدیم الاعتقادی اپنا وجود رکھتے ہیں۔ بالخصوص دیہی ، پسماندہ اور ناخواندہ آبادی والے علاقوں میںتو ایسے فرسوہ رسوم و رواج اور عقائد کا غلبہ ہے کہ جان سن کر عقل حیران رہ جاتی ہے آج کل کے ٹیکنالوجی اور آگاہی کے دور میں بھی یہ سب کچھ ہو رہا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ جعلی پیروں،
جوتشیو ں اور نام نہاد سادھوئو ں کی موجیں لگی ہوئی ہیں اوروہ اتنی دولت بٹور رہے ہیں کہ ترقی یافتہ علاقوں کے رہائشی سوچ بھی نہیں سکتے۔ایسا ہی ایک واقعہ بھارتی ریاست راجستھان کے ضلع بارمر کے ایک گائوں رتن پور میں پیش آیا جہاں ایک (ہندوعقیدے کے تحت)عبادت کرنےوالی خاتون اچانک غائب ہو گئی۔جلد ہی گائوں سمیت آس پاس کے کئی علاقوں میں اس بات کی دھوم مچ گئی اور دوردرازمقامات سے لوگوں نے اس کو ایک معجزہ قرار دیتے ہوئے اپنی مرادیں پوری کروانے اس گھر میں آنا شروع کردیا ہےاور چند ہی دنوں میں اس گھر میں نذرانوں کی مد میں روپے پیسے کی ریل پیل شروع ہو گئی ہے۔پولیس نے اس واقعے کا نوٹس لے کر معاملے کی از خود تحقیقات شروع کردی ہیں۔ گڈا میلانی پولیس سٹیشن کے انسپکٹر پیارے لال کا کہنا ہے کہ عبادت کرنے والی خاتون کا غائب ہوجانا مضحکہ خیز بات ہے۔ ہمارا ماننا ہے کہ وہ خاتون اپنے غائب ہونے کا ڈھونگ رچاکر کہیں روپوش ہو گئی ہے اور یہ تمام گھر والے اس بات سے باخبر ہیں۔ انسپکٹر پیارے لال نے مزید کہا کہ گھر والوں نے اس کی گمشدگی کی کوئی بھی رپورٹ درج نہیں کروائی ۔تاہم ہم نے اپنے طور پر اس کی گمشدگی کی رپورٹ درج کرکے اس کی تلاش شروع کر دی ہے۔