مصنوعی ذہانت نے مونا لیزا میں جان ڈال دی

مصنوعی ذہانت کے محققین نے لیونارڈو ڈی ونچی کی مشہور پینٹنگ مونا لیزا میں نظر آنے والی خاتون میں جان ڈال دی ہے۔

پینٹنگ کی مدد سے بنائی جانے والی ویڈیو میں خاتون اپنے سر، آنکھوں اور منہ کو حرکت دیتی نظر آ رہی ہیں۔ ڈیپ فیک ٹیکنالوجی کی تازہ ترین ویڈیو ماسکو میں قائم سام سنگ کی مصنوعی ذہانت کی ریسرچ لیبارٹری میں بنائی گئی۔

سام سنگ کے ایلگوردمز کو سلیبریٹیز کی یوٹیوب سے اکٹھی کی گئی 7000 تصاویر پر تربیت دی گئی۔

کچھ لوگوں نے قابلِ یقین ڈیپ فیک ٹیکنالوجی کے عروج پر تشویش کا اظہار کیا ہے کہ اس ٹیکنالوجی کا غلط استعمال کیا جا سکتا ہے۔

تصویر میں جان ڈالنے کے لیے مصنوعی ذہانت کے نظام نے تصویر میں موجود چہرے کے نقوش اور حرکات کی نقشہ کشی کی۔ اس نظام کی مدد سے ایلبرٹ آئنسٹائن اور میرلِن مُنرو کی ویڈیوز بھی بنائی گئی ہیں۔ سسٹم کے اپنے بارے میں بنائی جانے والی ویڈیو کو ملا جلا ردِعمل ملا۔